جنت اور جہنم میں جھگڑا پوائنٹ ٹو پوائنٹ کالم نگار انجینئروسیم اقبال میئو

0
40

جنت اور جہنم میں جھگڑا

پوائنٹ ٹو پوائنٹ

کالم نگار انجینئروسیم اقبال میئو ——————————— جنت اور جہنم میں جھگڑا حضرت محمدؐ نے فرمایا: “جنت اور جہنم آپس میں لڑ پڑیں،جنت نے کہا بات یہ ہے کہ میرے اندر وہی لوگ آئیں گے جو کمزوراورمعاشرے کے گرے پڑے ہونگے۔جہنم نے کہا”میرے اندرتو بڑے جباراور متکبر قسم کے لوگ ہوں گے” اللہ تعالیٰ نے جنت سے فرمایا”تومیری رحمت کی مظہرہے،تیرے ذریعے میں جس پرچاہوں رحم کروں”۔جہنم سے اللہ نے فرمایا”تو میرے عذاب کی مظہر ہے تیرے ذریعے میں جسے چاہوں سزادوں۔ اللہ تعالیٰ جنت اور جہنم کو بھردے گا۔جنت میں اس کافضل ہوگا حتیٰ کہ اللہ تعالیٰ ایسی مخلوق پیدا فرمائے گاجوجنت کے باقی ماندہ رقبے میں رہے گی۔۔اور جہنم،جہنمیوں کی کثرت کے باوجود”ھَلْ مِنْ مَّزیْد” کا نعرہ بلندکرے گی۔یہاں تک اللہ تعالیٰ اس میں اپناقدم رکھے گا۔جس پرجہنم پکاراٹھے گی:”قَطْ قَطْ وَعِزَّتِکَ” ‘بس بس تیرے جلال کی قسم” (صحیح بخاری،کتاب التوحید) اللہ تعالیٰ کے حضور گڑگڑا کردعا ہے کہ اللہ ہمیں ان تمام خواہشات کوترک کرنے کی توفیق عطافرمائے جو ہمیں جہنم کا ایندھن بنانے کا سبب بن رہی ہیں۔بے شک خواہشات ترک کرنا بھی پیغمبری طاقت ہے۔ #تحریر #انجینئروسیم اقبال میئو