ماہ صیام الوداع تحریر۔۔۔ رانا عاشق علی تبسم

0
42

ماہ صیام الوداع
تحریر۔۔۔ رانا عاشق علی تبسم چشتی صابری

ماہ صیام کو اللہ نے اپنا مہینہ قرار دیا ہے جو ہمارے لئے اللہ کی طرف سے مغفرت۔ رحمت۔ نعمت۔ برکت۔ اور دوزخ سے بچاو کا ذریعہ بن کر آیا ہے ۔ اب ہم ماہ صیام بابرکت کو الوداع کہہ رہے ہیں ہم ماہ صیام کی بطور مہمان کیا خدمت بجا لائے ۔۔۔۔ کیا ہم نے متقی و پرہیزگاری سیکھی ۔۔۔ پانچ وقت نماز باجماعت ادا کی ۔ تراویح و تسبیح کا اہتمام کیا ۔۔۔ ہمسایوں سے رشتوں داروں سے اور گھر والوں سے ہمارا طرز سلوک کیسا رہا ۔۔۔ مستحقین غریب مسکین بے بس لاچار افراد کی مالی امداد ۔۔ صاحب استطاعت نے غریب کی سحری و افطاری کا اہتمام کیا ۔۔ آپ کا ہمسایہ بھوکا تو نہیں سویا۔۔۔ روزے نماز تراویح و تسبیح سے ہم نے کیا سیکھا ۔۔ ہم نے پیٹ کا روزہ رکھا یا جسم کے تمام اعضاء کا ۔۔۔ ہم نے تول ماپ میں کوتاہی تو نہیں کی۔۔۔ جھوٹ چوری فریب و فراڈ منافقت چغل خوری چھوڑی کمزور انسان پر کوئی جانی مالی ظلم تو نہیں ڈھایا ۔۔۔ کیا رشوت و سفارش کا سہارا تو نہیں لیا ۔۔۔ ریاکاری چھوڑ دی۔۔۔ ذات کی کسرنفسی کی۔۔ خود سے دوسرے انسان کو افضل جانا ۔۔۔ الغرض بابرکت جانے والے مہمان سے کیا سبق اور انسانیت سیکھی ۔۔۔ انشاء اللہ ناظرین کے سامنے منگل کی شام سلطان نیوز پر قرآن و حدیث اور سنت رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے مطابق الوداعی ماہ صیام کا پروگرام نشر کیا جائے گا ۔۔۔۔۔ تحریر و مکالمات ۔۔۔ رانا عاشق علی تبسم چشتی صابری