سکول میں فوجی وزٹ اوراستاد۔۔۔۔۔ نظام تعلیم پر طمانچہ۔۔۔۔۔۔حقائق کشا کالم۔۔۔۔سلطان نیوز پر۔۔۔

0
53

سکول میں فوجی وزٹ اوراستاد۔۔۔۔۔ نظام تعلیم پر طمانچہ۔۔۔۔۔۔حقائق کشا کالم۔۔۔۔سلطان نیوز پر۔۔۔

پنجاب کے فرسودہ نظامِ تعلیم اور تبدیلی سرکار کے منہ پر طماچہ

میں ایک MEA ہوں اور الحمدللہ اپنے پیشے کے ساتھ وفادار ہوں درست رپورٹ پیش کرنا اپنا فرض سمجھتا ہوں لیکن آج پہلی بار ایک سکول کے وزٹ کے دوران میں اپنے ضمیر کے ہاتھوں مجبور ہو گیا اور میں نے وہاں کے ہیڈ کو تھوڑی سی رعایت دے دی ۔اور میں اس گناہ اور بد دیانتی کا ذمہ دار موجودہ حکومت اور نظامِ تعلیم کو گردانتا ہوں ۔
اپنے دوسرے ٹارگٹ سکول میں پہنچا تو ہیڈ مجھے دیکھتے ہی گھبرا گیا میں بھی سمجھ گیا کے سکول میں کوئی نا کوئی مسلہ ضرور ہے۔ خیر وزٹ شروع کیا تمام ریکارڈ بہترین تھا اور مکمل بھی ۔ لیکن ہیڈ متواتر پریشاں حال تھا ۔ میں نے کہا کہ جناب مجھے کلاسز میں لے چلیں طلبا ء کے ہیڈ کاؤنٹ کے لئے۔ ہیڈ لے گیا میں نے حاضری کاؤنٹ کی تو وہ %89 تھی ۔ہیڈ نے مجھے درخواست کی کہ سر مہربانی کر دیں لیکن میں نہیں مانا۔ اچانک ہیڈ نے بچوں کے سامنے اپنے ہاتھ باندھ کے مجھ سی درخواست کر دی اور ساتھ ہی میرے پاؤں پہ گر گیا اور ہیڈ صاحب جو ایم فل تعلیم یافتہ تھے ساتھ میں انکی آنکھوں سے آنسو بھی جاری ہو گئے تیسری اور دوسری جماعت کے بچے یہ منظر دیکھ رہے تھے میں ہکا بکا تھا ہیڈ ٹیچر کے ساتھ اس کے 3 اور ساتھی اساتذہ بھی آ گئے اور ہمنت سماجت کرنے لگے کہ سر آپ خود ہمیں جو مرضی کہ لیں ہماری رپورٹ نا کریں کیوں کے پھر AEO , Deputy اور DEO صاحب تک ہماری بعزتی ہو گی وہاں کلرک حضرات الگ سے ذلیل کرتے ہیں۔ آپ ہی بتا دیں کے ہمارا کیا قصور ہے؟ ہماری وجہ سے ہمارے ضلع کی رینکنگ متاثر ہوئی تو پھر اگلے 6 ماہ ہم لوگ روز دفاتر میں رسوا کئے جایں گے۔
مجھ سے رہا نا گیا میں نے کہا کہ آپ صرف 5 بچے اور لے آؤ تو آپ کی حاضری %92 ہو جائے گی آپ جاؤ اور 15 منٹ تک 5 بچے لے آؤ میں رپورٹ سینڈ نہیں کرتا بلکہ آپکا انتظار کرتا ہوں۔ 2 اساتذہ گئے اور روزے کی حالت میں سخت گرمی میں پتہ نہیں کہاں کہاں سے کھیتوں میں کام کرتے ھوے بچوں کو لے آے مزید یہ انکشاف ہوا کے 3 بچے ایسے تھے جو اپنے والدین کے ساتھ دیہاڑی پر تھے اساتذہ نے فی کس 50 روپے خود سے دے کر انکو سکول میں حاضر رکھا ہوا تھا تا کہ MEA وزٹ پر حاضری پوری ہو ۔
انکی حاضری کا ٹارگٹ پورا ہو گیا لیکن آج مجھے اتنا زیادہ افسوس ہوا کے وہ قوم کیا ترقی کرے گی جو اپنے محسن کے ساتھ ایسا سلوک کرے گی- مئی کا مہینہ بھی ختم ہونے والا تھا لیکن ان 5 ماہ میں چاروں اساتذہ میں سے صرف 1 استاد کو 1 دن کی چھٹی ملی تھی وہ بھی پتہ نہیں کیسے۔ اتنی ایمرجنسی تو فوج میں بھی نہیں ہوتی حالیہ پاک بھارت کشیدگی میں بھی میرے دوست اور جاننے والے اپنی اپنی باری پر چھٹی آ رہے تھے لیکن یہاں محکمہ تعلیم پنجاب میں تو نارمل حالات میں بھی چھٹی کا کوئی تصور نہیں ۔خدارا اساتذہ کرام کی عزت کریں انہیں ذہنی طور پر حاضر کریں وہ نبیؐ کے نائب ہیں انکا پیشہ پیغمبرانہ ہے ورنہ اس قوم کا مقدر تباہی کے سوا کچھ نہیں ۔
وزیرِ تعلیم اس بابت کافی عرصہ پہلے اساتذہ سے وعدہ بھی کئے ھوے ہیں لیکن ۔۔۔۔۔۔