پاکستان کی ترقی میں مزدور محنت کشوں کا کردار مسلمہ ہے۔ آئی ایس او پاکستان فیصل آباد ڈویژن۔

0
85

پاکستان کی ترقی میں مزدور محنت کشوں کا کردار مسلمہ ہے۔ آئی ایس او پاکستان فیصل آباد ڈویژن۔

فیصل آباد (سلطان نیوز )یکم مئ یوم  مزدور کے موقع پرترجمان آئ ایس او پاکستان فیصل آباد ڈویژن برادر وقاص ہادی نے کہا کہ”مزدوروں کو یہ علم ہی نہیں کہ یوم مزدور کیا ہوتا ہے”
پاکستان سمیت دنیا بھر میں ہر سال یکم مئی کو محنت کشوں سے اظہار یکجہتی کے لئے مزدوروں کا عالمی دن منایا جاتا ہے۔گزشتہ کئی برسوں سے دنیا بھر میں یکم مئی کا دن مزدوروں کے عالمی دن کے طور پر منایا جا رہا ہے لیکن اس کے باوجود محنت کشوں کے مسائل کے حل کیلئے اس قدر سنجیدہ اقدامات نہیں کئے گئے جتنے کئے جانے چاہیئیں۔اسلام کے معاشی نظام میں غربت کا خاتمہ اور محنت کشوں و مزدوروں کے دکھ درد کو بانٹنا بنیادی حیثیت رکھتا ہے۔مزدور کا پسینہ خشک ہونے سے پہلے اس کا معاوضہ ادا کرنا یہ اسلام کا ہی سنہری اصول ہے۔موجودہ ظالمانہ نظام سے غربت کی شرح میں اضافہ ہورہا ہے۔جس سے امیر امیر تر اور غریب غریب تر ہوتا جا رہا ہے۔
انھوں نے مزید کہا کہ ہر سال یوم مزدور کے مناسبت سے مختلف پروگراموں کا انعقاد کیا جاتا ہے اور مزدور طبقے کی حالت بہتر بنانے کےلیے بڑے بڑے دعوے اور وعدے کئے جاتے ہیں لیکن اس دن کے گزرنے کے ساتھ ہی پھر ایک سال تک خاموشی چھا جاتی ہے۔

بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح نے فرمایا تھا کہ پاکستان مزدوروں کی خوشحالی کے بغیر ترقی نہیں کرسکتا“۔ حکومت کو چاہئے کہ مزدور وں کے حالات میں بہتری کے لئے اقدامات اور ان کی اجرت و تنخواہوں میں مناسب اضافے کا اعلان کرے۔ بدقسمتی سے پاکستان میں مزدور تحریک ہمیشہ کمزور رہی ہے ، مزدور رہنماﺅں کی جانب سے مزدور تحریک کو منظم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات نہیں کئے گئے۔
یکم مئی 1886ءکو امریکا کے شہر شکاگو کے مزدور، سرمایہ داروں اور صنعتکاروں کی جانب سے کئے جانے والے استحصال کے خلاف سڑکوں پر نکلے تو پولیس نے اپنے حقوق کی آواز بلند کرنے والے پرامن جلوس پر فائرنگ کر کے سینکڑوں مزدوروں کو ہلاک اور زخمی کردیا جبکہ درجنوں کو حق کی آواز بلند کرنے کی پاداش میں تختہ دار پر لٹکا دیا، لیکن یہ تحریک ختم ہونے کے بجائے دنیا بھر میں پھیلتی چلی گئی جو آج بھی جاری ہے۔
جبکہ پاکستان میں قومی سطح پر یوم مئی منانے کا آغاز 1973 ءمیں وزیر اعظم پاکستان ذوالفقار علی بھٹو کے دور حکومت میں ہوا تھا اور آج تک جاری و ساری ہے۔
رپورٹ سیف نذر بلوچ