وزارت اطلاعات سے چھٹی، فیاض الحسن چوہان کو آئندہ کونسا عہدہ ملے گا، اعلان کر دیا گیا

0
187

وزارت اطلاعات سے چھٹی، فیاض الحسن چوہان کو آئندہ کونسا عہدہ ملے گا، اعلان کر دیا گیا

لاہور (سلطان نیوز)فیاض الحسن چوہان کے ریمارکس پر وفاقی اور صوبائی کابینہ ، پارٹی کے اقلیتی اراکین اسمبلی ،رہنمائوں اور اپوزیشن کی جانب سے بھی شدید تنقید کی گئی جبکہ فیاض الحسن چوہان سے وزارت واپس لینے اور انہیں ڈی سیٹ کرنے کے لئے قرارداد یںبھی قومی اور پنجاب اسمبلی میں جمع کرا دی گئیں ۔ ذرائع کے مطابق فیاض الحسن چوہان نے معاملے کی نزاکت کو دیکھتے ہوئے پیشگی اپنے بیان پر وضاحت جاری کر کے معذرت بھی کر لی تھی تاہم شدید ردعمل کے باعث پارٹی نے ان کی وضاحت اور معذرت کو قبول کرنے سے انکار کر دیا وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار نے فیاض الحسن چوہان کو ایوان وزیر اعلیٰ طلب کر کے وزیر اعظم عمران خان اور پارٹی کے شدید رد عمل سے آگاہ کیا ۔ ذرائع کے مطابق وزیراعلی پنجاب نے کہا کہ آئین کے تحت اقلیتوں کے برابر کے حقوق ہیں اور ان کا خیال رکھنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔فیاض الحسن چوہان نے وزیر اعلیٰ کو اپنے بیان پر وضاحت د یتے ہوئے ہندو برادری کی دل آزاری پر معذرت کرنے کے حوالے سے بھی آگاہ کیا ۔فیاض الحسن چوہان نے اپنی وضاحت میں کہا کہ میرا مخاطب ہندو مذہب یا ہندو برادری نہیں بلکہ نریندر مودی، بھارتی فوج اور بھارتی میڈیا تھامیرے الفاظ سے اگر ہمارے پاکستانی ہندو بھائیوں کی کسی بھی طرح دل آزاری ہوئی ہے تو میں معذرت خواہ ہوں۔ فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ تمام اقلیتیں پاکستان کا حصہ ہیں اور ہم سب پاکستانی ہیں۔ میرا مخاطب نریندر مودی، بھارتی فوج اور بھارتی میڈیا تھا،میرا ٹارگٹ قطعی ہندو مذہب اور ہندو برادری نہیں تھا۔