الریاض ۔ مجلس پاکستان الریاض کی طرف سے ( اسلامی حکومت کس طرح قائم ہوتی ہے) کے موضوع پر سیمینار کا اہتمام

0
13

الریاض ۔ مجلس پاکستان الریاض کی طرف سے ( اسلامی حکومت کس طرح قائم ہوتی ہے) کے موضوع پر سیمینار کا اہتمام کیا گیا
سعودی عرب( تازہ ترین سلطان نیوز) جس میں مذہبی، فلاحی اور سیاسی عمائدین کے علاوہ پاکستانی کمیونٹی کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ تقریب کے مہمان خصوصی پروفیسر ڈاکٹر آصف قریشی نے اپنے خطاب میں کہا کہ اسلام ایک کامل دین اور مکمل دستور حیات ہے اسلام جہاں انفرادی زندگی میں فرد کی اصلاح پر زور دیتا ہے وہیں اجتماعی زندگی کے اصول وضع کرتا ہے جوزندگی کے تمام شعبوں میں انسانیت کی راہنمائی کرتا ہے اسلام کا نظامِ سیاست وحکمرانی موجودہ جمہوری نظام سے مختلف اوراس کے نقائص ومفاسد سے پاک ہے اسلامی نظامِ حیات میں جہاں عبادت کی اہمیت ہے وہیں معاملات ومعاشرت اور اخلاقیات کو بھی اولین درجہ حاصل ہے، اسلام کا جس طرح اپنا نظامِ معیشت ہے اور اپنے اقتصادی اصول ہیں اسی طرح اسلام کا اپنا نظامِ سیاست و حکومت ہےاسلامی نظام میں ریاست اور دین مذہب اور سلطنت دونوں ساتھ ساتھ چلتے ہیں، دونوں ایک دوسرے کی تکمیل کرتے ہیں دونوں ایک دوسرے کے مددگار ہیں، دونوں کے تقاضے ایک دوسرے سے پورے ہوتے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ جب دین کمزور پڑتا ہے تو حکومت بھی کمزور پڑ جاتی ہے اورجب دین کی پشت پناہ حکومت ختم ہوتی ہے تو دین بھی کمزور پڑ جاتا ہے، اس کے نشانات مٹنے لگتے ہیں۔اسلام نے اپنی پوری تاریخ میں ریاست کی اہمیت کو کبھی بھی نظر انداز نہیں کیا۔انبیاء کرامؑ وقت کی اجتماعی قوت کواسلام کےتابع کرنے کی جدوجہد کرتے رہے۔ ان کی دعوت کا مرکزی تخیل ہی یہ تھا کہ اقتدار صرف اللہ تعالیٰ کےلیے خالص ہو جائے اور شرک اپنی ہر جلی اور خفی شکل میں ختم کردیا جائے اور انسان اللہ کے خلیفہ کی حیثیت سے خدمات انجام دے گا۔ حافظ عبدالوحید نے اپنے خطاب میں کہا کہ قرآن کےمطالعہ سے معلوم ہوتا ہے کہ حضرت یوسف ،حضرت موسی، حضرت داؤد، اور نبی کریم ﷺ نے باقاعدہ اسلامی ریاست قائم بھی کی اور اسے معیاری شکل میں چلایا بھی۔ اسلامی فکر میں دین اورسیاست کی دوری کاکوئی تصور نہیں پایا جاتا اور کا اسی کانتیجہ ہے کہ مسلمان ہمیشہ اپنی ریاست کواسلامی اصولوں پر قائم کرنے کی جدوجہد کرتے رہے۔ یہ جدوجہد ان کے دین وایمان کاتقاضہ ہے ۔قرآن پاک اور احادیث نبویہ میں جس طرح اخلاق اور حسنِ کردار کی تعلیمات موجود ہیں۔اسی طرح معاشرت،تمدن اور سیاست کے بارے میں واضح احکامات بھی موجود ہیں جن پر عمل پیرا ہونا سب مسلمانوں پر فرض ہے۔ تقریب سے نسیم پاشا، ڈاکٹر محمود باجوہ، سید مخدوم امین تاجر، سید خالد عمر، افتخار احمد خان، حبیب احمد مہمند اور رانا عمر فاروق نے بھی خطاب کیا۔ آخر میں سوال و جواب کا سلسلہ بھی شروع کیا گیا جس میں پرفیسر ڈاکٹر آصف قریشی نے نہایت ہی اعلٰی دلائل کے ساتھ حاضرین کے سوالات کے تسلی بخش جوابات دئیے۔
رپورٹ
ابوالفضل ربانی نمائندہ خصوصی سعودی عرب