اسرائیل نوازی کسی صورت قابل قبول نہیں ۔۔مسئلہ فلسطین آج بھی اتنا اہم ہے جتناکل اہم تھا۔۔اسرائیل نوازی آئین پاکستان اور نظریہ پاکستان سے غداری کے مترادف ہے ۔۔قاسم شمسی صدر آئی ایس او کا دبنگ اعلان

0
31

حکومت امیگریشن کی آڑ میں اسرائیلی شہریوں کی اجازت پر وضاحت پیش کرے،آئی ایس او پاکستان

اسرائیل کے ساتھ کسی بھی قسم کے تعلقات کو آئین پاکستان سے غداری تصور کرتے ہیں،آئی ایس او پاکستان

حکومتِ وقت اسرائیل کو تسلیم کرنے کی کوششوں سے باز رہے،مرکزی صدر

لاہور (تازہ ترین سلطان نیوز)حکومت امیگریشن قوائد کی آڑ میں اسرائیلی شہریوں کی اجازت پر وضاحت پیش کرے اسرائیل کو تسلیم ناکرنے اور اسرائیل سے خفیہ یا اعلانیہ تعلقات کی بھرپور نفی کرتے ہوئے رسمی طور پر بیانیہ بھی جاری کرے َان خیالات کا اظہار مرکزی صدر آئی ایس او پاکستان سید قاسم شمسی نے لاہور میں کیا ،انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ دوماہ سے اسرائیل نوازی کی جارہی ہے جس کو بعد میں غلطی قرا ردیا جاتا ہے

حکومت وقت یہ جان لے کہ ہم اسرائیل کو کسی بھی صورت قبول نہیں کریں گے اسرائیلی طیارے کی آمد ِپارلیمنٹ میں اسرائیل کے حق میں تقریر ِمیڈیا پر اسرائیل کے حق میں ٹاک شو اور اب امیگریشن قوائد کی آڑ میں اسرائیلوں کی آمد کی اجازت دیناغلطی نہیں بلکہ ایک منظم سازش کے تحت اسرائیل کو مظور کرنے کی ناکام کوشش کی جاری ہے جس کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا ایسی گھناونی حرکتیں قائد اعظم اور علامہ اقبال کے نظریات و افکار کو نابود اور فلسطین کاز کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہیں

۔مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ آئی ایس او پاکستان کے کارکنان القدس کو ہرگز فراموش نہیں ہونے دیں گے۔ فلسطین کا مسئلہ آج بھی عالم اسلام کا اہم ترین مسئلہ ہے۔مسئلہ فلسطین صرف عرب دنیا کا ہی نہیں بلکہ پوری مسلم ا مہ اور انسانیت کا اولین مسئلہ ہے اور اس کے منصفانہ حل کے بغیر خطے سمیت عالمی امن قائم نہیں ہو سکتا ہے

مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ فلسطین صرف فلسطینیوں کا وطن ہے، یہودیوں کا اس میں کوئی حق نہیں۔ہم ہرگز کسی بھی صورت اسرائیل کو تسلیم نہیں کریں گے۔وقت کے حکمران ایسے مکروہ فیصلوں سے باز رہیں قاسم شمسی کا کہنا تھا کہ پاکستان بھر کی مذہبی تنظیمیں حکومت کی اس مزموم سازش کے خلاف متحد ہوکر اسرائیل کو قبول کرنے کی کوششوں کو ناکام بنائیں انہوں نے مزید کہا کہ قائد اعظم محمد علی جناح دنیا کے وہ واحد رہنما تھے کہ جنہوں نے فلسطین پر غاصبانہ طور پر قائم کی جانے والی جعلی ریاست اسرائیل کو قبول نہیں کیا حکومت کی ذمہ داری ہے کہ بانیان پاکستان کے افکار و اصولوں کے خلاف سرگرم عناصر سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے۔چاہے وہ حکومتی صفوں میں موجود ہوں یا اپوزیشن کی صفوں میں۔پاکستان کے عوام اپنے عظیم قائدین کے سنہرے اصولوں کے مطابق فلسطین کو فلسطینی عوام کا وطن تسلیم کرتے ہیں اور اسرائیل کو بانیان پاکستان کے اصولوں کے مطابق جعلی اور غاصب ریاست سمجھتے ہیں اور اسرائیل کے ساتھ کسی بھی قسم کے تعلقات کو قطعا نظریہ پاکستان کی نفی اور آئین پاکستان سے غداری تصور کرتے ہیں۔
یاد رہے گزشتہ دنوں ایف آئی اے کی ویب سائٹ پر 7 ممالک کے شہریوں کو پاکستان آنے کی مشروط اجازت کے قوائد و ضوابط جاری کئے گئے تھے، نئی امیگریشن قوائد کی فہرست میں اسرائیل سمیت بھارت، بنگلہ دیش، بھوٹان، نائجیریا، فلسطین اور صومالیہ کا نام شامل کیا گیا تھا۔
رپورٹ میاں عدیل اشرف بیوروچیف لاہور ڈویژن