چنیوٹ۔ تھانہ بھوآنہ کے تھانیدار نے انصاف کو جوتی کی نوک پر رکھدیا۔۔کرپشن کی عجب داستان رقم۔ تفصیل لنک میں رپورٹ سید مخدوم زیدی

0
453

چنیوٹ۔ تھانہ بھوآنہ کے تھانیدار نے انصاف کو جوتی کی نوک پر رکھدیا۔۔کرپشن کی عجب داستان رقم

تھانہ بھوآنہ میں تعینات سب انسپکٹر عمر دراز کلہ جن کے چہرے پر شرعی داڑھی بھی الحمداللہ موجود ہے مگر پیسہ کمانے کی حرص ختم نہ ہوسکی ۔تھانہ بھوآنہ میں بذریعہ عدالت گزشتہ ماہ شمیم بی بی بیوہ علی رضا قوم سید کی جانب سے ایف آئی آر کے اندراج کے لیے رابطہ کیا گیا عدالت سے درخواست تھانہ بھوآنہ میں پہنچ گئی مگر عمر دراز کلہ نے ملزم پارٹی کے ساتھ مبینہ ساز باز کرکے درخواست کو دبائے رکھا جب بھی مدعیہ تھانے میں جاتی اپنی درخواست پر کاروائی کے لیے تو چہرے پر سنت نبی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم سجائے عمر دراز کلہ نہ اس خاتون کے ساتھ بدتمیزی سے پیش آتے بلکہ گالیاں دیتے ہوئے کہتے کہ میں تمہارے خلاف مقدمہ درج کردوں گا پھر ایس اچ او بھوآنہ چوہدری محمد افضل کی بار بار مداخلت پر ایف آئی آر درج ہوگئی مگر ملزمان کو گرفتار کرنے کی بجائے ان کو پہلے سے اطلاع پہنچا دی جاتی رہی درخواست سفر کرتے ہوئے ڈی ایس پی سرکل بھوآنہ کا عارضی چارج سنبھالنے والے لیاقت علی صاحب کے پاس آئی انہوں نے بھوآنہ میں کیا سنا مدعیہ کو سچا قرار دیا پھر ملزم پارٹی نے عمر دراز کلہ کی مشاورت سے ڈی پی او چنیوٹ کو درخوست دے کر انکوائری ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر پر لگوا لی جہاں خوش قسمتی سے وہی لیا قت علی صاحب ہی تھے مگر حیرت انگیز طور پر لیاقت علی صاحب جنہوں نے بھوآنہ میں تو مدعیہ کو سچا قرار دیا پرسوں چنیوٹ اپنے آفس میں بھی مدعیہ شمیم بی بی کو سچا قرار دیتے ہوئے کہا کہ سوموار کو اپنے ساتھ گواہ لے او ان کے خلاف کاروائی کرتے ہیں آج جب شمیم بی بی اپنے گواہوں جن میں ان کا دیور سید سیف علی بھی تھا تو محترم عمر دراز کلہ سب انسپکٹر نے بجائے ملزمان کے خلاف کاروائی کرتے انہوں نے مدعیہ کو ہراساں کرتے ہوئے مذکورہ گواہ کے خلاف ہی رپورٹ پیش کردی کہ یہ نشہ کرتا ہے اس نے چوری کی ہے انصاف کا بول بالا دیکھنے سے تعلق رکھتا ہے کہ ڈی ایس پی لیاقت علی جو بھوآنہ اور پھر چنیوٹ میں مدعیہ شمیم اختر کو سچا قرار دے چکے ہیں آج اس کے خلاف تھے انصاف کا ایسا مظاہرہ آپ نے کبھی نہیں دیکھا ہوگا یہی عمر دراز کلہ جن کے خلاف انسداد رشوت ستانی کے محکمہ نے کاروائی کرتے ہوئے ایف آئی آر بھی درج کروائی اور موصوف معطل بھی رہے زیر نظر مقدمہ میں بھی عمر دراز کلہ نے نمک حلالی کرتے ہوئے ملزمان کو تحفظ فراہم کیا ڈی ایس پی لیاقت علی صاحب کی کارکردگی پر بھی سوالیہ نشان ہے کیا یہی انصاف ہے؟