وزیراعظم 66سال کے تھے تو کیا ہوا شادی تو نئی نئی تھی ناں؟؟ عمران خان نے وزارت اعظمیٰ ملنے کے بعد اپنی حکومت کی تمام ترکامیابیوں کا کریڈٹ بشریٰ بی بی کو دے دیا، مکمل تفصیلات جاری جانیے اس لنک میں

0
48

وزیر اعظم عمران خان نے وزارت اعظمیٰ ملنے کے بعد اپنی حکومت کی تمام ترکامیابیوں کا کریڈٹبشریٰ بی بی کو دے دیا۔اسی متعلق گفتگو کرتے ہوئے معروف صحافی خوشنود علی خان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے تقریر میں خاتون اول کو کریڈٹ دیا کہ اصل میں تو قربانی بشریٰ بی بی کی ہے۔خوشنود علی خان نے کہا کہ عمران خان نے حکومت کے پہلے 100 روز میں صرف ایک چھٹی کی اور بشریٰ بی بی کے پاس رہے۔
وزیراعظم عمران خان نے دن رات کام کر کے بہت بڑی قربانی دی اور ان کے صرف ایک چھٹی کرنے سے ظاہر ہوتا ہے کہ عمجران خان کس لگن سے کام کر رہے ہیں۔ جس پر پروگرام میں موجود صحافی نے کہا کہ عمران خان کی عمر 66 سال ہے کیا آپ یہ کہنا چاہ رہے ہیں کہ انہوں نے ایک چھٹی کر کے قربانی دی۔
تو خوشنود علی خان نے کہا کہ میرا کوئی اور مطلب نہیں میں تو یہ کہہ رہا ہوں کہ وہ کام میں اتنا جت گئے کہ ان کو شادی بھی یاد نہیں رہی۔

وزیر اعظم عمران خان نے وزارت اعظمیٰ ملنے کے بعد اپنی حکومت کی تمام ترکامیابیوں کا کریڈٹ بشریٰ بی بی کو دے دیا۔اس موقع پر انکا کہنا تھا کہ ویسے تو مصروفیت اتنی ہوتی ہے کہ ٹی وی دیکھنے کا وقت نہیں ملتا ۔ تاہم جب بھی ٹی وی پر کوئی ناانصافی دیکھتا ہوں تو میرا دل کڑھتا ہے اور اگر ایسے ہی کسی واقعے پر ردعمل دیتے ہوئے میں افسوس کا اظہار کروں تو بشریٰ بی بی کو مجھے یاد کروانا پڑتا ہے کہ میں وزیراعظم ہوں اور میں اس مسئلے کو حل کرسکتا ہوں ،جیسے ہی وزیراعظم عمران خان نے یہ دلچسپ بات سنائی تو ہال قہقہوں سے گونج اٹھا۔
اس موقع پر انکا کہنا تھا کہ میں 22 سال حزب اختلاف میں رہا ہوں اور ابھی بھی یقین نہیں آتا کہ میں وزیراعظم بن چکا ہوں۔اس پر مسلم لیگ ن کہ طرف سے بھی رد عمل سامنے آیا ۔ مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ بشریٰ بی بی سےدرخواست ہےعمران صاحب کو یقین دلاتی رہیں وہ وزیراعظمبن چکے ہیں