سفر ازبکستان و پہلے قرآن پاک کی زیارت منور اقبال تبسم

0
107

سفر ازبکستان و پہلے قرآن پاک کی زیارت

تحریر ۔۔ منور اقبال تبسم

9میں قیام کے دوران شاید مسجد ذولنورین میں پہلے قرآن پاک کی زیارت میرے لئے کسی اعزاز سے کم نہیں تھی ۔میرا ذہن فوری طور پر خلیفہ سوم حضرت عثمان ذولنورین رضی اللہ تعالی عنہہ کے اس شاندار دور کی طرف چلاگیا جب قرآن پاک کو کتابی شکل میں مرتب کیا جارہا تھا اور اس پہلے قرآن پاک پر حضرت عثمان زولنورین کا خون مبارک بھی بکھرا ہوا ہے ،میری آنکھوں سے آنسو آگئے مجھے پڑھی وہ تمام باتیں یاد آگئیں جو بلوائیوں نے 40دن تک آپ کے گھر کا محاصرہ کرکے آپ کو شہید کیا ۔مجھے بتایا گیا کہ عظیم فاتح امیر تیمور لنگ جب فتوحات کرتے مدینہ پہنچا تو واپسی پر وہ اس عظیم نسخہ کو تاشقند لے آیا ،جب روس نے ازبکستان پر قبضہ کیا تو روس نے 14سوسال پرانی کتاب کے طور پر اس کو اپنے قبضہ میں لے لیا اور اسے ماسکو لے گئے ۔ازبکستان کی آزادی کے کچھ سال بعد روس سے یہ عظیم کتاب واپس لی گئ اور اس قرآن پاک کو ایئرپورٹ سے لانے کیلئے ازبکستان حکومت نے جو وزیر اعظم سے بھئ بڑھ کر پروٹوکول دیا اس کی ویڈیو یوٹیوب پر دیکھی جاسکتی ہے ۔تاشقند ازبکستان کا دارلحکومت ہے ،ازبکستان کی سرحد افغانستان سے ملتی ہے ،ایک زرعی ملک ہے اور ہمارے گائیڈ کے مطابق دنیا میں پھل پیدا کرنے والا تیسرا بڑا ملک ہے ،اگر چہ اسلامائزیشن کا عمل دخل زیادہ ہے ،مساجد بھی ہیں مگر وہ کثرت نہیں جو پاکستان میں ہے ۔ ازبکستان میں اگر سخت قوانین بھی ہیں مگر آزادی بھی بہت ہے ۔ پاکستان سے تاشقند جاتے ہوئے مجھے تقریبا 13ہزار میں 100ڈالر کا نوٹ ملا اور یہ سو ڈالر جب میں نے ازبک کرنسی سوئم میں تبدیلی کرائی تو مجھے سو ڈالر کے بدلہ سات لاکھ 90ہزار سوئم ملے ۔ جس سے یہاں کی کرنسی کی خراب صورت حال کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے ۔ ازبکستان میں موجود تمام ہوٹلز پر انڈین کا کنٹرول ہے ۔ہم جہاں بھی گئے انڈین ہوٹل ہوتا تھا ۔ہوٹلز ہیں رات کے کھانے کے بعد مختلف قسم کے آزادانہ ڈانس عام ہیں ۔ ازبکستان میں اگر آپ شادی کرنا چاہتے ہیں تو نہایت آسان عمل ہے ۔ آپ اس کے والدین سے سودا کرکے اسے پاکستان لاسکتے ہیں ۔ ازبکستان میں طالبان اور داعش کا بھئ بڑا اثر رسوخ ہے ،امن و امان کی صورت حال تاشقند میں اسلام آباد سے بھی بدتر ہے ۔ہمارے گائیڈ نے رات کو اکیلے سفر اور موبائل اور رقم جیب میں ڈال کر نکلنے سے سختی سے منع کیا ،لوگ کرخت ہیں ۔ اور مہمانوں سے انکا سلوک کوئ اچھا نہیں ہوتا ۔ مسجد نورین میں اس عظیم قرآن پاک کی زیارت کیلئے 18رکنی ایک یہودی وفد بھی اسرائیل سے آیا ہوا تھا ۔ ازبکستان کے چار بڑے شہروں میں تاشقند ،ثمر قند اور بخارا بھی شامل ہیں ۔صحیح بخاری کے مرتب حضرت امام بخاری کی جائے پیدائش بخارا اور انکا مزار ثمر قند میں ہے ۔مجھے ازبکستان میں گزارے دن ہمیشہ یاد رہینگے
منور اقبال تبسم