جھنگ میں ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن کیوں روک دیا گیا؟حافظ عمیر الغزالی

0
195

جھنگ میں ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن کیوں روک دیا گیا؟ حافظ عمیر الغزالی
جھنگ: (سلطان نیوز ) پاکستان ذمہ دار شہری کے مرکزی سیکرٹریٹ میں مرکزی کابینہ کا اجلاس ہوا۔ جس چیئرمین پاکستان ذمہ دار شہری حافظ عمیرالغزالی اور سینئروائس چیئرپرسن محترمہ نیلم ناصر مگھیانہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جھنگ میں ناجائز تجاوزات کے خلاف آپریشن جو سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم پر شروع کیا گیا تھا مگر ضلع جھنگ میں یہ آپریشن حدبندی اور نشان لگانے تک محدود رہا۔ اس کے بعد کوئی کاروائی نہیں کی گئی۔ اس اذیت ناک خاموشی پر سارا جھنگ کرب میں مبتلا ہے۔ جلد حقائق عوام کے سامنے لائیں گے۔ اس دوران ایڈوائزر برائے کرائمز طارق اسلم ٹونی نے کہا کہ بس سٹینڈ ایوب چوک میں واپس کیوں لائے گئے؟ اگر ایک دفعہ بس سٹینڈز شفٹ ہوئے تو پھر کس کی رضامندی سے واپس لائے گئے؟ ان کو فی الفور شہر کے باہر منتقل کیا جائے۔ مرکزی ایڈوائزر برائے ریفارمز محمد فیاض حسین نے کہا کہ سارے جھنگ کے واٹر فلٹریشن پلانٹس جو کہ یونیسکو کی امداد سے بنائے گئے تھے وہ تمام اب غیر فعال ہوچکے ہیں۔ ماحولیات کا ادارہ خرگوش کی نیند لے رہا ہے۔ اکے علاوہ مرکزی جنرل سکرٹری محمد سعید انصاری اور مہر نوید سدھانہ ایڈوائزر برائے میڈیا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم جھنگ میں جہاں جہاں کرائم ہورہا ہے اس کیلئے سوشل میڈیا پر تصاویر کے ساتھ مہم چلائی جائے گی اور جماعت کے ترجمان ماہانہ ذمہ دار شہری میں بھی جھنگ میں ہونے والے کرائمز پر نچلی سطح سے اٹھا کر اجاگر کرنے کیلئے باقاعدہ صفحات رکھے جائیں گے۔ اس کے علاوہ حافظ قاسم عثمانی سیکرٹری مالیات۔ ایڈیشنل جنرل سیکرٹری مقدس شیخ۔ ڈپٹی جنرل سیکرٹری ملک محمد مبین۔ مرکزی ترجمان ملک حسنین کھوکھر اور دیگر نے شرکت کی۔اس کے علاوہ بھی جو جو مافیاز جھںگ میں سرکاری اراضی پر ناجائز انتقالوں کے ذریعے قابض ہیں انکو بھی جلد بے نقاب کیا جائے گا

رپورٹ مہر محمد یار بیوروچیف جھنگ