میرے دل کے دوست تحریر منور اقبال تبسم

0
43

میرے دل کے دوست

تحریر منور اقبال تبسم
بانی کوٹ اسلام کبیروالا

مجھے نہیں فرق پڑتا کہ میرے دشمنوں کی تعداد کیا ہے اور میرے دوست کم کیوں ہیں , میں نے کبھی دوستوں کی تعداد بڑھانے یا جمع غفیر اکٹھا کرنے پر زور نہیں دیا ,ہمیشہ میرا دائرہ چند دوستوں کے درمیان ہی گھومتا رہا ہے جنہیں میں دل کے دوست سمجھتا ہوں , میری ان دل کے دوستوں سے بچوں والی لڑائیاں بھی ہوتی ہیں اور انہیں میں نے خود کو برا بھلا کہنے کا پورا استحقاق دے رکھا ہے ,میں سمجھتا ہوں یہ مجھے اپنی ,,جاگیر ,,سمجھتے ہیں اور کسی کیساتھ شیئر کرنا معیوب سمجھتے ہیں , ان کے بس میں ہو تو میں کسی کی طرف مسکرا کر بھی نہ دیکھوں .
میرے صحافت ,سیاست اور کاروبار کے لاتعداد دوست ہیں مگر دل کے رشتہ والے دوست چند ایک ہیں .یہی میرا اثاثہ ہیں .مجھے یہ دکھ بھی دیتے ہیں ,اذیت سے بھی نوازتے ہیں .میری خوشی کا باعث بھی بننے ہیں ,مگر ہیں تو میرے دوست ناں اور میرے لئے یہی اعزاز کیا کم ہے کہ یہ مجھے تکلیف پہنچانے کیلئے میرے ,,حاسدوں,, کیساتھ وقت بتانا بھی ضروری سمجھ لیتے ہیں , یہ جانتے ہیں کہ میں ان سے محبت رکھتا ہوں مگر یہ پھر بھی مجھے مختلف القابات سے نوازتے ہیں
کاش یہ مجھے سمجھ سکتے ,کاش یہ میرے دل کے اندر جھانک کر دیکھ سکتے ہیں کہ ان کا مرتبہ یہاں کتنا بلند و بالا ہے ,یہ دل اپنی مرضی دکھاتا ہے اگر میں اسکی مرضی کے خلاف کروں تو پریشر بڑھا کر گولیاں کھانے پر مجبور کردیتا ہے .
بس میں دوستوں سے کہتا ہوں ,,انسانیت , کی قدر کرو , تکبر مت کرو ,عزت اور محبت بانٹو ….تمہیں مفاد پرست بہت مل جائیں گے مگر محبت کرنے والے شاید نہیں
میرے کئ دوست اور بہی خواہ جو دنیا سے رخصت ہوگئے ,وہ آج بھی میری دعاوں میں شامل ہیں ,روزانہ نماز فجر کیبعد ایک تسبیح درود شریف تسبیح , تسبیح تیسرا کلمہ اور مختلف دعائیں ہر روز پڑھ کر انہیں نام لیکر بخشتا ہوں اور پرور دگار سے انکی زندگی کی غلطیوں کوتاہیوں اور گناہوں سے درگزر کرنے کیلئے روتا ہوں , کیونکہ ان 4سے میرا دل کا رشتہ تھا , اس سے بڑھ کر اور وفا کیا کروں ,شاید انکی اولاد ,انکے بھائ بھی اس اہتمام سے انکے لئے یہ دعائیں نہ کرتے ہوں
آج صرف کہنا یہ ہے کہ.میرے دل کے دوست دور رہیں یا پاس ,وہ میرے دل کے دوست ہیں ,ان سے میں چاہ کر بھی نفرت نہیں کرسکتا کیونکہ وہ میرے دل سے جڑے ہیں اور زندگی کیلئے مضبوط دل بہت ضروری بلکہ لازمی ہے .
منور اقبال تبسم